Main Menu

چھ برس پرانا غم خوشی میں تبدیل، لارڈز ٹیسٹ میں پاکستان کی 75دوڑوں سے جیت، یاسر مردِ میدان

پاکستان نے انگلستان کو پچہتر دوڑوں کے فرق سے شکست دیکر لارڈز ٹیسٹ میں کامیابی حاصل کر کے چار میچوں کی سیریز میں ایک صفر کی برتری حاصل کر لی۔

فاتح ٹیم کے کھلاڑیوں نے اس کامیابی کا جشن روایت سے ہٹ کر پشپ اپ لگا کر اور فوجی سلامی پیش کر کے منایا۔

چھ برس قبل یہی میدان تھا جب پاکستان ٹیم کے تین کھلاڑیوں پر سپاٹ فکسنگ کے الزامات لگے۔انہیں سزا اور جیل ہوئی۔ قسمت کورحم آیا ، آج انہیں تین میں سے ایک” سزا یافتہ“ گیند باز عامر نے آخری گورے جیک بال کی کلیاں بکھیریں تو پاکستان کے نام کے آگے 75دوڑوں کی فتح جگمگانے لگی۔چھ برس پرانے غم قومی ٹیم کے جوانوں نے اپنی شاہانہ کاکردگی سے خوشیوں میں بدل دیئے۔

میچ کے دو دن ابھی باقی تھے اوردو سو تراسی کا تعاقب میزبان ٹیم کے لیئے ممکنات میں سے تھا لیکن تیز گیند باز راحت علی نے پہلے تین گوروں کو پویلین کی راہ دکھلا کر امید کے دیئے جلا دیئے۔

بعد ازاں جونی بیئرسٹوو، گیری بیلنس، اور جیمزونس کی چالیس سے پچاس رنزکے درمیان کی چھوٹی باریاں ضرور منظر عام پر آئیں مگر دوسری جانب پہلی باری کے ہیرویاسر نے انگلش ٹیم کی مڈل آرڈ ر بلے بازی کی کمر توڑ کر رکھ دی۔ انہوں نے اہم چار وکٹیں حاصل کیں۔

عامر نے آخری دو بلے بازوں کو بجلی کی سی رفتار میں پھینکی جانے والی گیندوں پر بولڈ کر کے پچہتر دوڑوں کی کامیابی پر مہر ثبت کر دی۔

میچ کے ہیرو بلاشبہ یاسر شاہ تھے جنہوں نے میچ میں دس وکٹیں حاصل کیں تاہم بیالیس سالہ مصباح کا پہلی باری میں لگایا جانے والا سینکڑا اور اسد شیفق کے دونوں باریوں میں ذمہ دارانہ کھیل نے اس فتح کی نوک پلک سنواری۔

سیریز کا دوسرا ٹیسٹ بائیس جولائی سے اولڈٹریفورڈ مانچسٹر میں شروع ہو گا۔

میچ کا مختصر سکور یہ رہا۔
پاکستان 339 & 215:
انگلستان 272 & 207:
پاکستان پچہتر دوڑوں سے جیت گیا۔

لارڈز ٹیسٹ،تیسرا دن:دوسری باری میںپاکستان کی بلے بازی لڑکھڑا گئی،282کی مجموعی برتری
میچ کے تیسرے روز انگلستان کو دو سو بہتر دوڑوں پر آﺅٹ کرنے کے بعد ا نگلش گیند باز کرس ووایکیس(5/31) کے سامنے پاکستان کی بلے بازی بھی لڑکھڑا گئی اور کھیل کے اختتام پر مہمان ٹیم کا مجموعہ 214رہا جبکہ اس پاس صرف دو وکٹیں باقی ہیں۔اس طرح پاکستان کی مجموعی برتری دو سو بیاسی ہو گئی۔
لارڈز کی پہلی باری میں سینکڑا لگانے والے مصباح الحق دوسری باری میں بنا کھاتہ کھولے آﺅٹ ہوئے۔اوپنر حفیظ بھی بنا رنز بنائے چلتے بنے۔تاہم شان مسعود،(24) اظہر علی(23) ، یونس خان(25) ، اسد شفیق(49) ، سرفراز(45) اور یاسر شاہ(30) مختصر باریاں کھیل کر پاکستان کو کھیل میں واپس لے آئے۔یاسر شاہ کے ساتھ محمد عامر وکٹ پر موجود ہیں۔ اگر باقی کی دو وکٹیں تیس کے لگ بھگ رنز بنانے میں کامیاب ہو گئیں تو انگلستان رنز کے تعاقب میں کافی مشکلات میں پڑ سکتا ہے۔ووایکیس جنہوں نے پہلی باری میں چھ پاکستانی بلے باز آﺅٹ کیئے تھے اس بار پانچ آﺅٹ کر کے میچ میں اپنی گیارہ وکٹیں مکمل کیں،معین علی نے دو کھلاڑی آﺅٹ کیئے۔

پاکستان اور انگلستان کے درمیان چار میچوں پر مشتمل ٹیسٹ سیریز کے پہلے ٹیسٹ کے دوسرے روز پاکستان کے لیگ سپنر یاسر شاہ نے عمدہ گیند بازی کرتے ہوئے انگلش ٹیم کے پانچ کھلاڑی آﺅٹ کیئے۔ سارا دن میزبان ٹیم دباﺅ کا شکار نظرآئی اور دوسرے روز کے کھیل کے اختتام پر ان کے سات کھلاڑی 253 کے مجموعہ پر ہمت ہار چکے ہیں۔پاکستان کی پہلی باری کے سکورتین سو انتالیس تک پہنچنے کے لیئے ابھی انہیں چھیاسی دوڑوں کی ضرورت ہے۔
دوسرے روز پاکستان کے گیند بازوں نے جہاںاچھی گیندیںپھینکی وہیں فیلڈروں نے متعدد کیچ ڈراپ کیئے ۔خاص طور پر میزبان ٹیم کے کپتان کک کے دو کیچ چھوڑے گئے جس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے انہوں نے اکیاسی دوڑیں بنا ڈالیں ،بالآخر وہ عامر کا شکار بنے۔لیگ سپنر یاسر نے صحیح معنوں میں انگلش بلے بازی کو دھچکہ لگایا ۔ انہوں نے پچیس اوورز میں پانچ بلے باز آﺅٹ کیئے۔کرس براڈ (11)اور ووایکس(31) تیسرے روز کھیل کا آغاز کریں گے۔
اس سے قبل پاکستان کی ٹیم اپنی پہلی بار میں مزید ستاون دوڑوں کا اضافہ کر کے339 پر آﺅٹ ہوگئی۔ مصباح ایک سو چودہ پر آﺅٹ ہو ئے جبکہ سرفراز نے پچیس دوڑیں بنائیں۔

 میچ کا پہلا دن پاکستان ٹیم کے کپتان مصباح الحق کے نام رہا جنہوں نے ایک بار پھر مردِ آہن کا کردار نبھاتے ہوئے خوبصورت ذمہ دارانہ سینکڑا سکور کیا۔ کھیل کے اختتامی لمحات میں پاکستان کی دو وکٹیں، اسد شفیق(73) راحت علی(0) غیر ضروری طور پر گر گئیں جبکہ پاکستان کا مجموعہ چھ وکٹوں کے نقصان پر دو سو بیاسی رہا۔مصباح الحق ایک سو دس کے انفرادی سکور پر دوسرے روز کھیل کا آغاز کریں گے۔

جمعرات تیرہ جولائی سے لارڈزکرکٹ گراﺅنڈ لندن میں شروع ہونے والے میچ میں ٹاس پاکستان نے جیتا اور پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا ۔ پاکستان کے ابتدائی دو کھلاڑی شان مسعود اور اظہر علی سات ، سات کے انفردی سکور پر ہمت ہارے تو گوروں کے حوصلے بڑھے لیکن حفیظ(40) اور یونس خان(33) کی چھوٹی باریوں نے طوفان کاراستہ روکنے میں اپنا کردار ادا کیا بعد میں مصباح نے اسد شفیق کے ساتھ مل کر پانچویں وکٹ پر ایک سو اڑتالیس دوڑوں کی شراکت بنا کر میچ کو بے قابو ہونے سے بچا لیا۔
مصباح نے سترہ چوکوں کی مدد سے ایک سو چون گیند وں پر لارڈز میں اپنی پہلی سینچری مکمل کی۔اسد شفیق نے تہتر دوڑوں کی عمدہ باری کھیلی۔
انگلستان کے گیند بازوں میںکرس ووایکیس نے چار وکٹیں حاصل کی۔
میڈیا کا کردا؟
ٹیسٹ سیریز کے آغا ز میں برطانوی میڈیا نے ٹیموں کی خوبیوں اور خامیوں پر زیادہ بحث کرنے کی بجائے ایک بار پھر عامر کو میچ فکسر کے روپ میں پیش کر کے سیریز کو ماضی کے تلخ لمحات کا لباس پہنانے کی کوشش کی ہے۔ پاکستان ٹیم کی توجہ تاہم کھیل پر مرکوز ہے ۔ دونوں سہہ روزہ پریکٹس مقابلوں میں پاکستان کی بلے بازی خاصی حد تک بہتر رہی۔ دوسری طرف انگلستان سری لنکا کے خلاف کامیابیاں سمیٹ کر اچھی پریکٹس میں ہے۔اس لحاظ سے یہ سیریز خاصی دلچسپ ثابت ہونے کی توقع کی جا رہی ہے۔
پاکستان ٹیم کی امیدیں ایک بار پھر تجربہ کار یونس خان اور مصباح الحق سے وابستہ ہیں۔ دونوں کی ماضی قریب میں بلے بازی کی فارم کمال کی رہی ہے۔عامر کی واپسی سے گیند بازی میں پاکستانی ٹیم مضبوط ہو چکی ہے۔ وہاب ریاض اور یاسر شاہ کے ساتھ مل کر وہ گوروں پر وار کرنے کے لیئے تیار ہے۔
ریکارڈز
پاکستان نے انگلستان کے خلاف آخری ٹیسٹ سیریز پچھلے برس امارات میں دو صفر سے جیتی تھی جبکہ
دو ہزار گیارہ بار ہ کی سیریز میں پاکستان نے انگلستان کو امارات میں کلین سویپ کیا تھا۔اس اعتبار سے پاکستان کا پلڑا تھوڑا بھاری ہے ۔
دو ہزار دس کی تنازعات سے بھرپور سیریز میں انگلستان نے اپنے میدانوں پر چار میچوںکی سیریز تین ایک سے جیتی۔اس سے قبل دو ہزار چھ میں انگلستان چار میچوں کی سیریز تین صفر سے جیتا۔
اب تک دونوں ممالک کے درمیان کل ستتر پانچ روزہ مقابلے کھیلے گئے جن میں سے اٹھارہ پاکستان اوربائیس انگلستان جیتا۔
انگلستان میں دونوں ممالک کے درمیان کل سینتالیس مقابلوں میں سے ،نو پاکستان اوربیس انگلستان جیتا۔
پاکستانی ٹیسٹ سکواڈ
مصبا ح الحق کپتان، محمد حفیظ، شان مسعود، سمیع اسلم، اظہر علی، یونس خان، اسد شفیق، افتخار احمد، سرفراز احمد، محمد رضوان، یاسر شاہ، ذوالفقار بابر، محمد عامر، وہاب ریاض، راحت علی، سہیل خان، عمران خان
پہلے ٹیسٹ کے لیئے انگلستان کا سکواڈ

الیسٹر کک،کپتان،معین علی،جونی بیئرسٹوو،جیک بال،گیری بیلنس،سٹیورٹ براڈ،سٹیون فن،ایلیکس ہیلز،ٹوبی رولنڈ جونز،جو روٹ،جیمز وینس،کرس ووایکس۔

بمقابلہ سسیکس سہ روزہ : تیسرا روز بارش کی نذر، میچ بے نتیجہ ختم، جمعرات سے پہلا ٹیسٹ شروع
ہوو میں کھیلے گئے سہ روزہ میچ کے تیسرے روزبارش کی وجہ سے ایک بھی گیند پھینکی نہ جا سکی اور میچ بے نتیجہ ختم ہو گیا۔ پاکستان کو پہلے دوروز میں بیٹنگ کی کافی پریکٹس مل گئی جس کا فائدہ جمعرات سے لارڈز کرکٹ گراونڈ پر شروع ہونے والے پہلے ٹیسٹ میں اٹھایا جا سکتا ہے۔

پاکستان نے سسیکس کے خلاف دوسری اننگز میںمحمد حفیظ( 23 رنز)کی وکٹ کے نقصان پر 63 رنز بنائے ۔ اوپنرشان مسعود اور اظہر علی وکٹ پر موجود تھے۔اس سے قبل سسیکس کاو¿نٹی کے ابتدائی بلے بازوں کی عمدہ بیٹنگ میزبان ٹیم پانچ بلے بازوں کے نقصان پر 291 دوڑوں کے مجموعہ تک پہنچ گئی۔ عمران خان اور وہاب ریاض نے پاکستان کی جان سے دو ،دو وکٹیں حاصل کیں جبکہ آف سپنر ذوالفقار بابر کے حصے میں ایک وکٹ آئی۔
یاد رہے کہ پاکستان نے اپنی پہلی اننگز میں پانچ وکٹوں کے نقصان پر 363 رنز بنا کر اننگز ڈیکلیئر کر دی تھی۔ اس میچ کی خاص بات اظہر علی کی شاندار بیٹنگ تھی جنھوں نے سمر سیٹ کےخلاف سینچری بنانے کے بعد یہاں پہلی باری میں145 رنز بنائے۔

یاد رہے کہ پاکستان اور سمر سیٹ کا میچ غیر فیصلہ کن رہا تھا۔
میچ کا سکور یہ رہا۔
پاکستان پہلی باری359-8 ڈیکلیئرڈ، دوسری باری 236-ڈیکلیئرڈ
سمر سیٹ پہلی باری 128 آل آﺅٹ، دوسری باری258-8

دورہ انگلستان کا مکمل شیڈول اور نتائج

جولائی
3-5 بمقابلہ سمر سیٹ ، ٹاﺅنٹن ، نتیجہ ، میچ غیر فیصلہ کن رہا۔
8-10 بمقابلہ سسیکس، ہوو ، نتیجہ ، میچ غیر فیصلہ کن رہا
14-18 پہلا ٹیسٹ، لارڈز
22-26 دوسرا ٹیسٹ ، اولڈ ٹریفورڈ
29-30 بمقابلہ وورسیسٹر شائر
اگست
3-7 تیسرا ٹیسٹ ، ایجباسٹن
11-15 چوتھا ٹیسٹ، دی اوول
18 پہلا ایک روزہ بمقابلہ آئرلینڈ، ڈبلن
20 دوسرا ایک روزہ بمقابلہ آئرلینڈ، ڈبلن
24 بمقابلہ انگلستان پہلا ایکروزہ۔ ساﺅتھمپٹن
27 دوسرا ایکروزہ ، لارڈز
30 تیسرا ایکروزہ۔ ٹرینٹ برج
ستمبر

یکم ، چوتھا ایکروزہ۔ ہیڈنگلے

 4 : پانچواں ایکروزہ، کارڈف

7 :اکلوتا بیس بیس، اولڈٹریفورڈ مانچسٹر






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*