Main Menu

حکومت ہاکی کی مالی ضروریات پوری کرے: اولمپیئن نوید عالم

naveedAlamEXhockeyPlayer

پاکستان ہاکی فیڈریشن (پی ایچ ایف ) کے متحرک ڈائریکٹر گیم ڈویلپمنٹ اینڈ ڈومسیٹک اولمپئن نوید عالم نے کہا ہے کہ حکومت سپورٹس پر اربوں روپے خرچ کررہی ہے لیکن یہ رقم سپورٹس پر لگنے کی بجائے ڈسٹرکٹ اور ڈویژنل سپورٹس دفاتر میں ہی استعمال ہوکر ختم ہوجاتی ہے ، پنجاب سپورٹس بورڈ نے ٹیلنٹ ہنٹ پروگرام کے لئے پرفارمرکوچز کی خدمات حاصل کرنے کی بجائے سیاسی لوگوں کے کہنے پر کوچز بھرتی کیئے جس سے بہتر نہیں آسکتی ۔

ایک خصوصی بات چیت کے دوران پاکستان ہاکی ٹیم کے سابق دفاعی کھلاڑی نوید عالم نے کہا کہ ہاکی کی بہتری کے لئے حکومت سے سکولز میں منی ٹرف لگانے اورکثیر الجہتی مقاصد میدان بنانے کی درخواست کی ہے ،حکومت ہاکی کی مالی ضروریات پوری کرے اور پاکستان ہاکی فیڈریشن رائٹ مین فار رائٹ جاب کے نظریہ کے تحت کام کرے تو آئندہ 2 سال میں پاکستان دنیا ئے ہاکی پر پھر سے حکمرانی کے قابل بن سکتا ہے۔

اپنی دبنگ رائے کے لیئے مشہور نوید عالم نے کہا کہ اس میں کوئی حقیقت نہیں کہ حکومت کی توجہ سپورٹس پر نہیں اگر ایسا ہوتا تو حکومت کھیل پر اربوں روپے خرچ نہ کرتی لیکن ان پیسوں کا درست استعمال نہیں ہورہا یہ بھی ایک حقیقت ہے ۔ حکومت کی جانب سے ملنے والے فنڈزکھلاڑیوں تک پہنچنے سے پہلے ہی ڈسٹرکٹ اور ڈویژن کی سطح پر ہی خرچ ہوجاتے ہیں ۔

 ایک سوال کے جواب میں نوید عالم کا کہنا تھا کہ ٹیلنٹ ہنٹ پروگرام حکومت کا کھیلوں کے فروغ کے لئے ایک احسن قدم ہے لیکن اس سے قبل سپورٹس فیسٹیولز پر خرچ ہونے والے اربوں روپے سے پنجاب سپورٹس بورڈ ایک اولمپئن بھی پیدا نہیں کرسکا۔

 پنجاب سپورٹس بورڈ کی جانب سے نئی کوچز کی بھرتی کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں نوید عالم کا کہنا تھا کہ اگر ان کوچز کی تقرری میرٹ پر کی جاتی تو یہ پنجاب میں کھیلوں کے فروغ کے لئے بہت مفید ثابت ہوسکتی تھی لیکن کوچز کی تعیناتی کے لئے سیاسی لوگوں اور ایسے آرگنائزوں کو اہمیت دی گئی جو ماضی میں ناکام رہے ہیں۔

 ہاکی کی بہتری کے لئے فوری اقدامات کے حوالے سے نوید عالم کا کہنا تھا کہ ہاکی گزشتہ 10 سال سے انتہائی نیچے جلی گئی تھی اور یہاں ہاکی کلچر بالکل ہی ختم ہوچکا تھا لیکن اب اس میں تھوڑی بہت بہتری آنا شروع ہوگئی ہے لیکن پاکستان کو بین الاقوامی سطح پر ہاکی کی حکمرانی دوبارہ حاصل کرنے کے لئے حکومت کو فنڈنگ اور پی ایچ ایف کو ایمانداری سے کام کرنا ہوگااور اس کے لئے ضروری ہے کہ مناسب کام کے لئے مناسب لوگوں کے انتخاب کی پالیسی پر سختی سے عمل کرنا ہوگا۔
انٹرویو: اشفاق مغل
تصاویر: عبدالقادر

_DSC3313 _DSC3319 _DSC3324






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*