Main Menu

پاکستانی کر کٹرز پر نجم سیٹھی کا بڑا احسان ہے: کرکٹر کاشف بٹ کی باتیں

قومی جونیئر ٹیم کے سابق کپتان ا ور نیشنل بنک کے کاشف بٹ نے کہا ہے کہ نجم سیٹھی نے پاکستان میں کرکٹ کی پرموشن کے لئے باتوں کی بجائے کام کیا ۔ پاکستان سپر لیگ کا انعقاد صرف نجم سیٹھی کا ہی کریڈٹ ہے جبکہ لاہور میں فائنل اور ورلڈ الیون کے بعد سری لنکا کا پاکستان آنا اس بات کی علامت ہے کہ پاکستان کر کٹ کے لئے نجم سیٹھی مثبت سوچ رکھتے ہیں ۔ سابق چیئر مین جنرل تو قیرضیاءنے وسیم باری سے مجھے ٹیم میں شامل کر نے کی سفارش کی لیکن معین خان نے شامل نہ کیا ۔

ایک ملاقات میں خصوصی گفت گو کرتے ہوئے کاشف بٹ نے کہا کہ جس وقت وہ قومی ٹیم کے کیمپ کا حصہ تھے اس وقت پسند نا پسند بہت زیادہ تھی جس وجہ سے میں ٹاپ پر فارمنس کے باوجود ٹیم کا حصہ نہ بن سکا ۔ انہوں نے مذید بتایا کہ موجودہ بورڈ کھلاڑیوں کی فلاح کے لئے بہت کام کر رہا ہے خاص طور پر شکیل شیخ نے ڈومیسٹک سطح پر ڈرافٹنگ سسٹم کو متعارف کر وایا یہ بہت اچھی بات ہے کیونکہ اس سے پر فارمنس دینے والے کھلاڑی ہی ٹیم کا حصہ بنیں گے ڈرافٹنگ سے کھلاڑیوں کو فائدہ اور میرٹ کو ترجیح دی جائے گی، پہلے لوگ اپنے اپنے کلبوں کے بچوں کو ٹیم میں شامل کر واتے تھے لیکن ڈرافٹنگ میں ایسا نہیں ہوگا ۔

 انہوں نے کہا کہ پی ایس ایل کا انعقاد پاکستانی کر کٹرز پر نجم سیٹھی کا بڑا احسان ہے کیونکہ پاکستانی کھلاڑیوں غیر ملکی لیگ میں موقع نہیں ملتا تھا پی ایس ایل سے نہ صرف قومی کر کٹرز کو پیسہ بلکہ غیر ملکی کھلاڑیون کے ساتھ کھیلنے کا تجربہ حاصل ہو رہا ہے اور چیمپنز ٹرافی صرف پی ایس ایل کی وجہ سے جیتی کیونکہ نہ صرف نئے کھلاڑی سامنے آئے بلکہ ان میں اعتماد بھی پیدا ہوا ،جبکہ ڈومسٹک کر کٹ کے حوالے سے انکا کہنا تھا کہ کلب کر کٹ کو پرموٹ کئے بغیر ہماری کر کٹ بہتر نہیں ہو سکتی۔ کلب میں جو اچھی پر فارمنس دیتا ہے کلب آفیشلز اسکو ٹیم میں شامل کر وانے کی بجائے خود ٹیم کا آفیشلز بن جاتا ہے۔

 انہوں نے کہا کہ پاکستان سابق بورڈ کسی پڑھے لکھے کھلاڑی کو قومی ٹیم مین شامل نہیں کرتا تھا مصباح الحق جس وقت قومی ٹیم کے کپتان بنے اس وقت سلمان بٹ کے ایشو کے بعد بورڈ کے پاس کوئی چوائس نہیں تھی لیکن مصباح لی لاٹری کھول گئی کیونکہ پاکستان میں باہر بیٹھا ہر کر کٹر ٹیم کے کر کٹر سے بہتر ہوتا ہے لیکن اس کو چانس نہیں ملتا جس کو چانس مل جائے وہ پر فارمنس دیتا ہے میں جس وقت قومی کیمپ میں شامل تھا اس وقت معین خان ٹیم کے کپتان تھے ۔






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*