Main Menu

فیفا ورلڈ کپ ٹرافی لاہور میں جلوہ گر ،پاکستان فٹ بال فیڈریشن تقریب سے غائب ؟

تقریب رونمائی میں جہانگیر خانزادہ ، کرسچین کاریمبیو، یونس خان ، حاجرہ خان اور کلیم اللہ سمیت شائقین کی بڑی تعداد کی شرکت
فٹ بال ٹرافی جیت کر پاکستان لائیں گے ، کلیم اللہ ، حاجرہ ، فٹ بال کے فروغ کے لئے میدان بنارہے ہیں ، جہانگیر خانزادہ

 ہزاروں کلومیٹر کا سفر طے کرکے فیفا فٹ بال ورلڈ کپ ٹرافی نے پاکستان میں اپنا جلوہ دیکھادیا ۔ تھائی لینڈ کے شہر چیانگ مائی سے لاہور پہنچنے والی ٹرافی کی تقریب رونمائی لاہو رکے مقامی ہوٹل میں ہوئی جہاں صوبائی وزیرکھیل پنجاب جہانگیر خانزادہ ، منسٹر فارپلاننگ ندیم کامران ، سیکرٹری سپورٹس عامر جان ، فرانسیسی فٹ بالر کرسچین کاریمبیو، سابق کپتان قومی کرکٹ ٹیم یونس خان ، پاکستا ن ویمن فٹ بال ٹیم کی کپتان حاجرہ خان ، قومی فٹ بال ٹیم کے کپتان کلیم اللہ اور پاکستان اور افغانستان میں کوکا کولا کے جنرل منیجر رضوان یوخان سمیت شائقین کی بڑی تعداد موجود تھی ۔

بہت سی آنکھیں پاکستان فٹ بال فیڈریشن کے کرتا دھرتا ﺅں کو تلاش کرتی رہیں جو اس تقریب سے غائب تھے۔

 تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر کھیل پنجاب جہانگیر خانزادہ کا کہنا تھا کہ فیفا ورلڈ کپ ٹرافی کا پاکستان آنا پاکستان کے لئے اعزاز کی بات ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت صوبے میں عالمی معیار کے فٹ بال گراونڈز بنارہی ہے جس سے فٹ بال کے کھیل میں بہتری آئے گی ۔

 اس موقع پر غیرملکی فٹ بالر کرسچین کاریمبیو کا کہنا تھا کہ انہیں پاکستان آکر بہت اچھا لگ رہا ہے اور یہاں انہوں نے فٹ بال سے پیار کرنے والی یوتھ کو کافی پرجوش دیکھا ہے ۔

 قومی فٹ بال ٹیم کے کپتان کلیم اللہ کا کہنا تھا کہ افسوس ہے کہ پاکستان ٹیم ورلڈ کپ میں شامل نہیں لیکن امید کرتے ہیں کہ ایک دن پاکستان ٹیم بھی ورلڈ کپ میں شرکت کے بعد ورلڈ کپ ٹرافی کو جیت کر پاکستان لائے گی ۔

اس موقع پر قومی ویمن ٹیم کی کپتان حاجرہ خان کا کہنا تھا کہ ٹرافی کا پاکستان آنا بہت اچھا لگ رہا ہے اور یہ پاکستانی فٹ بالرز اور فٹ بال شائقین کے لئے بہت خوشی کا موقع ہے ۔

 یاد رہے کہ فیفافٹ بال ٹرافی ورلڈ کپ سے قبل 9 ماہ تک دنیا کے 51ممالک کے 91 شہروں میں ایک لاکھ باون ہزار کلو میٹر کا سفر طے کرے گی ۔ فیفا ٹرافی خصوصی طیارے کے ذریعے دنیا بھر میں رونمائی کے بعد روس پہنچے گی جہاں 14 جون سے فیفا ورلڈ کپ شروع ہورہا ہے۔






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*