Main Menu

ہاکی چیمپئنز ٹرافی:پاکستان کی بائیس رکنی ٹیم کااعلان

اگلے ماہ ہالینڈ میں کھیلی جانے والی ہاکی کی سینتیسویں چیمپئنز ٹرافی کے لیئے پاکستان کی بائیس رکنی ٹیم کا اعلان کر دیا گیا ہے۔قومی ٹیم کی قیادت رضوان جونیئر کریں گے ۔ ٹیم کا انتخاب ایک روزہ ٹرائلزکے بعد کیا گیا جہاں چیف سلیکٹر اصلاح الدین کے علاوہ پی ایچ ایف کے صدر خالد سجاد کھوکھر اور سیکریٹری شہباز احمد نے بھی شرکت کی۔

پاکستان میں پہلی بار ہالینڈ سے حاصل کردہ جدید ٹیکنالوجی جی پی ایس ایل سسٹم کی مدد سے کھلاڑیوں کی فٹنس کا بغور جائزہ لینے کے بعد کھلاڑیوں کا انتخاب کیا گیا ہے۔جی پی ایس ایل سسٹم کی مدد سے کھلاڑیوں کی فٹنس کے احوال معلوم ہونے کے ساتھ ساتھ یہ بھی معلوم ہو جاتا ہے کہ کونسا کھلاڑی انجری چھپا رہا ہے اور کس کھلاڑی کو آرام کی ضرورت ہے۔

قوم ٹیم ان کھلاڑیوں پر مشتمل ہے: رضوان جونیئرکپتان، عمران بٹ مظہر عباس، امجد علی، عرفان سینئر، مبشر،علیم بلال، عماد شکیل بٹ، توثیق ارشد، راشد علی، تصور عباس، ابوبکر، عرفان جونیئر، ارسلان قادر، عمر بھٹہ، رضوان سینئر، شفقت رسول، علی شان، اسفر یعقوب، اعجاز احمد، رانا سہیل اور دلبر ۔

چیمپیئنز ٹرافی 23جون سے یکم جولائی تک ہالینڈکے شہر بریڈا میںکھیلی جارہی ہے جس میں پاکستان اور میزبان ملک ہالینڈ کے علاوہ آسٹریلیا، بیلجیئم، ارجنٹینا اور بھارت شامل ہیں۔ افتتاحی میچ روایتی حریفوں پاکستان اور بھارت کے درمیان کھیلا جائے گا جبکہ آسٹریلیا کی ٹیم اپنے اعزاز کا دفاع کرے گی۔
دس بار کی فاتح جرمنی اور دو ہزار چار کی فاتح سپین اس مرتبہ شریک مقابلہ نہیں ہیں۔

پاکستان ٹیم کے دیگر مقابلے۔

چوبیس جون :پاکستان بمقابلہ آسٹریلیا
چھبیس جون: پاکستان بمقابلہ ہالینڈ
اٹھائیس جون: پاکستان بمقابلہ ارجنٹینا
انتیس جون : پاکستان بمقابلہ بیلجیئم

چیمپئنز ٹرافی مقابلوں کے اہم ریکارڈز:
آسٹریلیا نے سب سے زیادہ چودہ ٹائٹل جیتے ، جرمنی دس بار اور ہالینڈ آٹھ مرتبہ چیمپئنز ٹرافی کا فاتح بنا۔
چیمپئنز ٹرافی کا آغاز انیس سو اٹہتر میں لاہو ر میں ہوا جہاں پاکستان چیمپئن بنا۔پاکستان نے یہ اعزاز تین مرتبہ جیتا ہے ، آخری مرتبہ انیس سو چورانوے میں۔
دو ہزار سولہ کی چیمپئنز ٹرافی میں پاکستان نے شرکت نہیں کی۔
دو ہزار چودہ میں پاکستان فائنل میں پہنچا لیکن جرمنی سے دو صفر سے شکست کھا گیا۔
بھارت یہ ایونٹ ابھی تک نہیں جیت سکا۔دو ہزار سولہ میں پہلی بار وہ فائنل میں پہنچا۔
پاکستان سات مرتبہ رنرز اپ رہا جبکہ بھارت نے یہ اعزاز صرف ایک مرتبہ حاصل کیا۔
پاکستان نے سات مرتبہ ہی تیسری پوزیشن حاصل کر کے کانسی کا تمغہ جیتا۔دوسری جانب بھارت صرف
ایک مرتبہ کانسی کا تمغہ جیتنے میں کامیاب ہوا۔






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*